sufi poetry about life

Kham Hai Sir-e-Insan – Sufi Poetry about Life

Presenting Sufi poetry about life of Peer “Naseer Ud Din Naser” Kham Hai Sir-e-Insan.

Sufi Poetry about Life

خم ہے سرِ انساں تو حرم میں کچھ ہے
لوگ اشک بہاتے ہیں تو غم میں کچھ ہے

بے وجہ کسی پر نہیں مرتا کوئی
ہم پہ کوئی مرتا ہے تو ہم میں کچھ ہے

یہ وہ نسبت ہے جو ٹوٹی ہے نہ ٹوٹے گی کبھی
میں تیرا خاکِ نشیں تو میرا سلطاں جاناں

میرا خدا جسے اوجِ کمال دیتا ہے
اُسے بتول کی چھوکٹ پہ ڈال دیتا ہے

پرکھنا ہو کسی کو تو یا حسین کہو
یہ وہ نام ہے جو شجرِ کھنگال دیتا ہے

Other Sufi Poetry About Life:

Waris Shah Kalam – Sufi Poetry in Urdu

Kalam Mian Muhammad Bakhsh – Sufi Poetry Urdu

Sufi Poetry Translation:

There   Is   Something   In  Ka’aba   That   People   Bow   Their   Head
When   People   Shed   Tears   There   Is   Something   In   Grief

No   One   Dies   For   No   Reason
If   Someone   Dies   On   Us,   Then   There   Is   Something   In   Us

There   Is   A   Relationship   That   Is   Not   Shattered   And   Will   Never   Break
I’m   Your   Slave   (Siol   Sitter)   And   You   Are   My   King

To   Whom   My   God   Gives   The   Peak   Of   Prefection
He   Puts   It   On   The   Threshold   Of   Batu   (R.A)

Kham Hai Sir-e-Insan-  Pir Naseer Ud Din Naser – Sufi Poetry about Life 

 

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *